پاکستان کے اہم صوبہ کے لوگ خطرناک بیماری میں مبتلا،رپورٹ نے سب کو ہلا دیا

سندھ میں ذیابیطس کے مریضوں میں تشویشناک حد تک اضافہ ہوگیا ہے اور نیشنل ڈائیبٹیز سروے2017 کے مطابق صوبے کی30 فیصد سے زائد آبادی ذیابیطس کے مرض میں مبتلا ہے۔معروف ماہر امراض ذیابطیس اور نیشنل ڈائیبٹیز سروے آف پاکستان کے سربراہ پروفیسر عبد الباسط نے کراچی پریس کلب میں عالمی یوم ذیابیطس کے حوالے سے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہسندھ میں ذیابیطس کے مریضوں میں تشویشناک حد تک اضافہ ہوگیا ہے اور نیشنل ڈائیبٹیز سروے2017 کے مطابق صوبے کی30 فیصد سے زائد آبادی ذیابیطس کے مرض میں مبتلا ہے۔
ڈاکٹر عبدالباسط نے کہ ماؤں سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے بچوں کو اپنا دودھ پلاکر انہیں مستقبل میں ذیابطیس سے محفوظ رکھیں ، اسکولوں سے درخواست کی کہوہ اسکول کے اوقات کار میں جسمانی سرگرمیوں کا دورانیہ دگنا کردیں، اسکول کی حدود میں سافٹ ڈرنکس اور جنک فوڈ پر پابندی عائدکریں اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ ایک نیشنل ڈائیبٹیز پالیسی بناکر ملک میں ہیلتھ ایمرجنسی لگادی جائے انہوں نے مزید کہا کہ جنک فوڈ، چکنائی بھرے کھانوں کے علاوہ ڈبے کا دودھ اور فیکٹریوں میں تیار شدہ کھانے کی اشیا ذیابطیس پھیلانے میں اہم کردار ادا کررہے ہیں جن سے عوام کو حتی الامکان احتیاط برتنا چاہیے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *