پیپل کے حیران کُن فوائد سامنے آگئے وہ کیا ہیں؟ آپ بھی جانیے

اب درخت لگانے کا رجحان کم ہوگیا ہے لوگ عالیشان گھروں میں حقیقی پودوں اور درختوں کے بجائے مصنوعی زیبائش والے پودے لگانا پسند کرتے ہیں.اگرانسان درختوں کی اہمیت اور افادیت سے واقف ہوجائے تو روز ایک درخت لگائےبرصغیرمیں پیپل کے درخت کو بہت اہمیت حاصل ہے، ماضی میں مختلف جگہوں اورسڑکوں پر پیپل کے درخت نظرآنا عام بات تھی جب کہ گھروں میں بھی بہت شوق سے یہ درخت لگایا جاتا تھا البتہ ابھی بھی سڑکوں پرپیپل کے درخت نظرآجاتے ہیں جو سالوں سے اپنی جگہ پر قائم ہیں۔یہ سچ ہے کہ پیپل کے درخت سے انسانوں کو پھل حاصل نہیں ہوتے لیکن قدرت نے اس کے ہرحصے میں بےحد فوائد رکھے ہیں۔ پیپل کے تنے، جڑوں اوربیجوں سے لے کراس کے ننھے پتوں میں بھی بے شمار فوائد چھپے ہیں۔

پیٹ میں درد کے لیے:

دو سے ڈھائی عدد پیپل کے پتے لیں اور اس کا پیسٹ بنالیں پھر اس میں 50 گرام گجک(مونگ پھلی اور گڑ)کے ساتھ ملاکر چھوٹی گھولیاں بنالیں اور دن میں 3 سے 4 بار یہ گولیاں کھائیں۔ یہ پیٹ کے درد میں آرام دلانے کے لیے بے حد مفید دوا ہے۔

سانپ کے کاٹنے میں فائدہ مند:
دو چمچ پیپل کے پتوں کا رس لے کرمریض کو جس جگہ سانپ نے کاٹا ہو وہاں 3 سے 4 بار لگائیں یہ رس زہر کا اثر کم کرنے میں بہت موثر ہے۔

جلدی امراض کے لیے:

جلدی امراض، جلد پرابھرنے والے ننھے دانوں اورخارش میں مبتلا افراد پیپل کے نرم پتوں کی 40 ملی لیٹرچائے بنا کر پئیں یہ چائے جلدی امراض میں بے حد فائدے مند ہے۔

ایڑیوں کا پھٹنا:

سرد موسم میں ہاتھوں، پیروں کی جلد کے علاوہ ایڑیاں بھی پھٹ جاتی ہیں جن میں بہت تکلف ہوتی ہے۔ بعض اوقات پھٹی ایڑیوں سے خون بھی نکلتا ہے۔ البتہ پیپل کے پتے پھٹی ایڑیوں میں بہت فائدے مند ہیں۔ پیپل کے نرم پتوں کا رس لے کر پھٹی ایڑیوں اور سردی سے متاثرہ ہاتھوں پرلگائیں یہ جلد سے سردی کا اثر ختم کرنے کے ساتھ ایڑیوں کو نرم ملائم بناتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *