مشہور شخصیت کو بچھڑے ایک سال گزر گیا

جنید جمشید نے پاپ موسیقی سے فنی کیرئیرشروع کیا اور اپنے میوزک بینڈکو وائٹل سائنز کے نام سے متعارف کروایا۔ پہلے البم کی ریلیز سے ہی اس بینڈ اور اس کے مرکزی گلوکار جنید جمشید نے لوگوں کے دلوں پر راج کیا.1987ء میں ریلیز ہونے والے گیت ’’دل دل پاکستان‘‘ نے خاص طور پر جنید جمشید کو شہرت کی بلندیوں پر پہنچادیا تھا.

جنید جمشید کےلئے 7 دسمبر 2016 کو پی آئی اے کے بدقسمت طیارے کا سفر ہی سفر آخرت ثابت ہوا۔سانحہ حویلیاں جہاں بہت سے خاندانوں کو سوگوار کرگیا وہیں ان بدقسمت خاندانوں میں معروف مذہبی اسکالر جنید جمشید کا خاندان بھی شامل تھا اور آج ان کی پہلی برسی منائی جارہی ہے۔سانحہ حویلیاں کو ایک سال ہونے پرسوگواروں کے زخم پھر تازہ ہوگئے، دل دل پاکستان کے گیت گانے والے جنیدجمشید کی دھڑکنیں بھی فضاؤں میں ان کے ملی نغمے کے ساتھ گونج اٹھی ہیں.

جنید جمشید آج اس دنیا میں نہیں لیکن اپنے بابا کے ساتھ گزرے لمحات کو یاد کرکے ان کے بچوں کا دل تڑپ اٹھتا ہے، خاندان سے جڑی خوشیاں ہوں یا کوئی بھی مشکل آئے بچوں کو اپنے بابا کی کمی محسوس ہوتی ہے جس سے ان کی آنکھیں بھیگ جاتی ہیں.جنید جمشید کو 2007ء میں حکومت پاکستان کی جانب سے تمغہ امتیاز سے بھی نوازا گیا اور2014 ء میں انہیں دنیا کی 500 بااثر مسلم شخصیات میں بھی شامل کیا گیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *