زردای طاہر القادری کے پاس کیوں گئے؟ معروف صحافی نے سب بتا دیا

آج طاہر القادری اور سابق صدر آصف علی زرداری کی لاہور میں ملاقات ہوئی۔اس ملاقات سے متعلق معروف صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود کا کہنا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن جون 2014 میں پیش آیا جس کے بعد اگست 2014 میں سابق صدر آصف علی زرداری نے نواز شریف سے رائیونڈ میں ملاقات کی۔اور انہیں مکمل سپورٹ کی یقین دہانی کرائی۔ڈاکٹر شاھد مسعود نے کہا کہ ایک بات یہ بھی یاد رکھنی چاہیے کہ طاہرالقادری نے پہلا دھرنا 2013 میں اسلام آباد میں دیا اور پیپلزپارٹی کی حکومت تھی۔اور اب وقت ایسا بدلہ ہے کہ آصف علی زرداری خود چل کے ڈاکٹر طاہر القادری کے پاس آئے ہیں۔ڈاکٹر شاھد مسعود نے یہ بھی بتایا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے بعد ڈاکٹر طاہرالقادری کو پچیس کروڑ روپے کی آفر ہوئی تھی جو انھوں نے نہیں لی۔

ڈاکٹر شاھد مسعود نے کہا ہے کہ جب سے باقر نجفی رپورٹ منظرعام پر آئی ہے تو کوئی بھی وفاقی حکومت کا نمایندہ شہباز شریف کو ڈیفنڈ کرنے کے لیے نہیں آیا۔مریم اورنگ زیب طلال چوہدری مصدق ملک سمیت کوئی بھی وفاقی نمائندہ شہباز شریف کے حق میں نہیں آیا صرف رانا ثناءاللہ نے اس متعلق بات کی وہ بھی اپنے آپ کو بچانے کے لیے۔اس کا مطلب یہ ہے کہ نواز شریف نے شہباز شریف کو بلکل سائیڈ پے کردیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت اس وقت بہت مشکل میں ہے۔ڈاکٹر شاھد مسعود نے کہا کہ طاہرالقادری اس وقت حکومت گرانے کی بات کر رہے ہیں آخر آصف علی زرداری کا اس سے کیا تعلق ہے؟آصف علی زرداری تین سال بعد ڈاکٹر طاہرالقادری کے پاس آئے ہیں۔ آصف علی زرداری کو اپنی پوزیشن واضح کرنی چاہیے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *