اصحاق ڈار کو دل کی بیماری نہیں ہے بلکہ .. عدالت نے سب بتا دیا

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈارکوآمدن سے زائد جائیدادبنانے کے ریفرنس میں اشتہاری قراردینے کا تحریری حکم نامہ جاری کردیا ہے۔احتساب عدالت کے جج نے کہا کہ ڈاکٹروں کے مطابق اسحاق ڈارکے دل کی شریان بند نہیں ہوئی۔اسحاق ڈار 30 اکتوبر، 2نومبر، 8نومبر، 14 نومبر، 21نومبر، 4دسمبر اور 11 دسمبرکو غیر حاضر رہے،انھیں پیش ہونے کیلیے موزوں وقت دیا گیا لیکن وہ پیش نہیں ہوئے۔

دالت نے قرار دیا کہ اسحاق ڈار نے ریفرنس میں تاخیرکیلیے بھارتی ڈاکٹر رنجیت کی میڈیکل رپورٹ پیش کی جبکہ برطانوی ڈاکٹر بیکرکی رپورٹ کے مطابق اسحاق ڈار کو دل کی بیماری لاحق نہیں ہے۔ تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اسحاق ڈارکے دونوں ڈاکٹروں کے مشاہدات ایک دوسرے سے مختلف ہیں اور انھیں دل کی سرجری کی کوئی ضرورت ہی نہیں تھی بلکہ انھوں نے جان بوجھ کر سماعت سے راہ فرار اختیار کی۔میڈیکل رپورٹ سے معلوم ہوتا ہے کہ اسحاق ڈارکو دل کی بیماری نہیں ہے۔ عدالت نے حاضری سے استثنیٰ کی درخواستیںمسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسحا ق ڈارکے مستقبل قریب میں گرفتاری کے امکانات نہیں ہیں اس لیے انھیں مفرور قرار دیا جاتاہے اوراستغاثہ کو ہدایت کی جاتی ہے کہ ان کیخلاف شہادتیں ریکارڈ کرائی جائیں۔عدالت نے استغاثہ کو ہدایت کی ہے کہ ملزم کی جائیدادکی تفصیلات عدالت کو فراہم کی جائیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *