دو سالہ بچے کی انوکھی دوستی

بھارت میں ایک مقام سمرتھ بنگلور سے 400 کلومیٹر دور ایک گاؤں الہ پور میں رہتا ہے جس کی لنگوروں سے دوستی کی خبر پورے بھارت میں پھیل چکی ہے۔ اس بچے کے چچا براما ریڈی کا کہنا ہے کہ یہ ایک انوکھا واقعہ ہے کہ علاقے کے لنگوروں نے کسی بہت چھوٹے بچوں سے اتنا لگاؤ دکھایا ہے۔ اس کے والدین گاؤں کے کھیت میں کام کرتے ہیں اور لنگور اس بچے سے کھیلتے رہتے ہیں اور والدین کو بچے پر حملے کا کوئی خوف نہیں ہے۔

بچہ اپنا کھانا ان لنگوروں کو دیتا ہے تو وہ اسے خوشی خوشی کھالیتے ہیں۔ لنگور اب روزانہ اس بچے سے ملنے آتے ہیں اور اگر بچہ سو رہا ہوتا ہے تو لنگور اسے بیدار کرکے اس کے ساتھ ایک دو گھنٹے تک کھیل کر واپس چلے جاتے ہیں۔ عموماً یہ لنگور دن کے ایک مخصوص وقت میں آتے ہیں۔ کُل 20 لنگور اس بچے کے دوست ہیں جن میں سے زیادہ تعداد میں لنگور روزانہ بچے سے ملنے آتے ہیں۔اس کے چچا کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہم نے سمرتھ کے برابر میں اسی کی عمر کا ایک بچہ بٹھایا لیکن اس عمل سے لنگور طیش میں آگئے اور اس سے پہلے کہ لنگور اسے نقصان پہنچاتے ہم نے اس بچے کو وہاں سے اٹھالیا۔

اس بچے کو ’دی جنگل بُک‘ کے اُس کردارموگلی کی طرح قرار دیا ہے جس میں ایک بچہ جنگل میں جانوروں کے ساتھ پل کر جوان ہوتا ہے۔بعض لوگ سمرتھ اور لنگوروں کے درمیان تعلق دیکھ کر حیران ہیں اور ان کا خیال ہے کہ وہ ان جانوروں کی زبان سمجھتا ہے اور جانور اس کے اشاروں کو پہچانتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *