ریکی کون سیکھ سکتا ہے؟

یہ دُنیا کا واحد طریقہ علاج ہے جو ہر کوئی آسانی سے سیکھ سکتا ہے۔ اس کے لئے روائتی ڈاکٹر یا طبیب ہونا ضروری نہیں اور نہ ہی کسی خاص تعلیمی استعداد، روحانی یا دانشورانہ درجے کی ضرورت پڑتی ہے۔ بنیادی تعلیم اور عام فہم و فراست کافی ہوتی ہے۔ اس لئے عملی طور پر ہر مرد یا عورت عمر کے کسی بھی حصّے میں ریکی سیکھ سکتا ہے۔ تربیت کے دوران ریکی ٹیچر ایک مختصر سا عمل کرتا ہے جس کے مکمل ہوتے ہی طالب علم میں ریکی سے علاج کرنے کی صلاحیت منتقل ہو جاتی ہے۔ اس عمل کو ریکی کی اصطلاح میں اٹیونمنٹ کہتے ہیں۔ اُن مریضوں کو جو بیماری کی شدّت کی وجہ سے بستر پر ہی رہتے ہیں، کو بھی اٹیونمنٹ دی جا سکتی ہے تاکہ وہ لیٹے لیٹے اپنا علاج خود کر سکیں۔

ریکی کو کامیابی سے استعمال کرنے کے لئے اس کا طریقہ سیکھنا ضروری ہو تا ہے۔ اس کے بغیر ریکی کو اپنی مرضی سے استعمال نہیں کیا جا سکتا۔ ریکی کی تربیت کے تین سے چار درجے یا مراحل ہوتے ہیں۔ ہر درجے کے لئے زندگی میں صرف ایک بار اٹیونمنٹ کے ذریعے یہ ابلیت حاصل کرنی ہوتی ہے۔ جس کے بعد اسے استعمال کرنے کے لئے صرف ہاتھوں کی ضرورت ہوتی ہے۔ ریکی سیکھنے یا استعمال کرنے کے لئے کسی مشین وغیرہ کی ضرورت نہیں ہوتی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *