موجودہ دور حکومت میں ریلوے کو کتنا فائدہ ہوا اور کتنا نقصان؟

مسلم لیگ ن کے موجودہ دور حکومت میں پاکستان ریلوے میں بہتری دیکھنے میں آئی۔ ریلوے کی آمدن میں ایک سو بائیس فیصد تک اضافہ ہوا، ای ٹکٹنگ کا نظام متعارف کرایا گیا ، جدید انجن شامل کئے گئے۔ خواجہ سعد رفیق نے ریلوے کی سیٹ سنبھالی تو ٹرین نے بہتری کا سفر شروع کیا. ریلوے کی آمدن کا پہیہ اٹھارہ ارب سے بڑھ کر چالیس ارب تک چلا گیا۔ تاہم تنخواہوں، پینشن اور دیگر مراعات میں خسارے سے ریلوے کی ٹرین کو بریک لگا تو خسارہ پانچ ارب اضافے سے پینتیس ارب تک پہنچ گیا۔

2013 میں ریلوے تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا تھا جبکہ اقتصادی ماہرین اس کی نجکاری کے پر زور حامی تھے۔ محکمہ نے آمدن کیلئے کچھ الگ سوچا اور ای ٹکٹنگ اور ڈپلیکیٹ ٹکٹ کے اجرا سمیت کئی مثبت اقدامات کئے۔ امریکا سے اسٹیٹ آف دی آرٹ دس لوکوموٹوز منگوائے گئے. ریلوے اسٹیشنز کی تزیئن و آرائش کے علاوہ ٹرینوں کے اوقات کار میں بھی بہتری لائی گئی۔ وزیر ریلوے کا دعوی ہے کہ موجودہ مالی سال کے اختتام تک ریلوے کی آمدن پچاس ارب ہو جائے گی۔ تاہم محکمے کے مکمل آڈٹ سے ہی حقیقی اعداد و شمار سامنے آ سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *