منافع بخش مقامی کاروبار۔

آج اس بھائی سے 2 مگے لسی کے پئیے، گپ شپ لگائی، فوٹو بنائی اور سرسری انٹرویو لیا۔ جو کام کی باتیں معلوم ہوئیں وہ یہ تھیں۔

روزانہ 15 کلو دودھ کی دھی لگاتا ہوں، جس سے 100 لیٹر چاٹی کی لسی بناتا ہوں، دودھ، آگ، برف، نمک، سرف وغیرہ کا خرچہ روزانہ 2 ہزار سے کم ہی رہتا ہے، 100 لیٹر لسی سے آدھا لیٹر والے 200 سے زیادہ مگے بن جاتے ہیں۔۔۔۔ اور شام تک سکون سے بک بھی جاتے ہیں۔۔۔۔ جس سے 4 ہزار تک رقم مل جاتی ہے، یعنی خرچے نکال کر 2 ہزار روزانہ آمدن ہے۔
یہ کام مزید صفائی کیساتھ، بوتلوں میں پیک کرکے، یا ڈپوزیبل گلاسوں میں پڑھے لکھے انداز میں بھی کیا جاسکتا ہے، اور اس سے بھی زیادہ آمدن حاصل کی جاسکتی ہے، اور ہاں 15 کلو دودھ سے لگ بھگ ایک کلو کے قریب دیسی گھی بھی روزانہ حاصل ہوجاتا ہے، جس کی قیمت کم از کم بھی 1200 روپے ہوتی ہے۔ مطلب روزانہ کی خالص آمدن 3 ہزار روپے سکہ رائنج الوقت۔
اب بتائیں ! ایک لاکھ روپیہ مہینے کا۔ جس دن مرضی چھٹی کرلو، شادی میں چلے جائیں ، بچوں کی دوائی لے آؤ۔۔۔۔۔ نہ کوئی چھک چھک کرنے والا باس نہ کوئی جڑھیں کاٹنے والا چاپلوس چپڑاسی نما کولیگ۔۔۔۔۔
ہمارا سیاپا یہ ہے کہ ہم لسی بیچنے کو تو توہین سمجھتے ہیں۔۔۔۔ لیکن بیچ سڑک کے کھڑے ہوکر مگے پر مگا لسی کا چڑھانے میں فخر محسوس کرتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *