عافیہ موومنٹ – پاکستان

والدین خصوصی بچوں کو گھروں میں قید کرنے کے بجائے” تعلیم و تربیت“ کیلئے بحالی مرکز لائیں: ڈاکٹر فوزیہ صدیقی
ڈاکٹر عافیہ ماہر تعلیم و خصوصی بچوںکی ذہنی نگہداشت بڑھانے کی ماہر ہے، اسے وطن واپس لایا جائے: پروفیسر تنویرملک
”خصوصی افراد کے بین الاقوامی دن“ کے سلسلے میں ڈاکٹر فوزیہ کا خصوصی افراد کی بحالی مرکز کا دورہ، تقریب سے خطاب کیا اور بچوں میں تحائف تقسیم کئے

کراچی ( )قوم کی بیٹی ڈاکٹر عافیہ کی ہمشیرہ اور عافیہ موومنٹ کی رہنما ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے ”خصوصی افراد کے بین الاقوامی دن“ کے سلسلے میں ایف سی ایریا، لیاقت آباد میں واقع سوشل ویلفیئر ڈپارٹمنٹ کے تحت قائم خصوصی افراد کی بحالی کے مرکز کا دورہ کیا جہاں پر خصوصی بچوں کی صلاحیتوں کے اظہار کےلئے تقریب کا انعقاد بھی کیا گیا تھا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ عافیہ موومنٹ کے کوآرڈینیٹر محمدایوب، امام حسین ہمدم، اومیپ ریسرچرز اینڈ آرگنائزرز کے رہنما پروفیسر تنویر ملک ، پروفیسر ڈاکٹر ضیاءالرحمان، مجیب الرحمان، جمیل اختر چشتی، شفیق احمد عباسی، این اے خان، عبدالرحمان و دیگر بھی موجود تھے۔ خصوصی افراد کی بحالی کے مرکزپہنچنے پر ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر ڈپارٹمنٹ محمد الناصر، اسسٹنٹ ڈائریکٹر مس تزین زہرہ، اساتذہ اور بچوں نے ڈاکٹر فوزیہ صدیقی اور دیگر مہمانوں کا گرمجوشی سے استقبال کیا۔ تقریب کا آغاز طالب علم شایان مرتضیٰ نے ساتھ تلاوت کلام پاک سے کیا۔ اس کے بعد طالبہ ندا مغل نے نعت رسول مقبول (ﷺ) پیش کی۔ ایک اور باصلاحیت طالب علم محمد شاہ فیصل نے وہیل چیئر پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم بھی آپ ہی کی طرح کے انسان ہیں۔ لوگوں کو چاہئے کہ ہمارے ساتھ نارمل افراد کی طرح برتاﺅ کریں۔ آپ اگر ہمیں آگے بڑھنے کا راستہ نہیں دے سکتے ہیں تو منفی برتاﺅ کے ذریعے ہمارا روکنے کی کوشش بھی نہ کیجئے۔ ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے تقریب کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بالغ بچوں کے اس مرکز میں سہولیات کی کمی کے باوجود طلباءو طالبات نے جس طرح اپنی صلاحیتوں کا اظہار کیا ہے وہ اساتذہ کی محنت اور جذبہ خدمت کو اجاگر کررہا ہے۔والدین خصوصی بچوں کو گھروں میں قید کرنے کے بجائے تعلیم و تربیت کیلئے بحالی مرکز لائیں۔ایسے بچوں کو شادی بیاہ و دیگر تقریبات میں ساتھ لے جانے پر شرم و ہچکچاہٹ محسوس نہ کریں۔ خصوصی افراد کے بحالی مرکز میں چند گھنٹے گذارنے سے ہمیں یہاں ایک نے کئی سہولتوں کی کمی کا احساس ہورہا ہے۔انہوں نے کہا کہ تعلیم کے لئے وفاقی اور صوبائی دونوں سطح پر بہت ہی کم بجٹ رکھا جاتا ہے۔اومیپ ریسرچرز اینڈ آرگنائزرز کے رہنما پروفیسر تنویر ملک نے کہا کہ ہمارے ملک میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے یا دوسرے لفظوں میں یوں کہنا چاہئے کہ کمی عوام میں نہیں بلکہ حکمرانوں میں ہے جس کی وجہ سے قیمتی ٹیلنٹ ضائع ہوجاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر عافیہ تعلیمی نظام کو بہتر بنانے اور خصوصی بچوںکی ذہنی نگہداشت کو بڑھانے کی ماہر ہے۔ڈاکٹر عافیہ کی ساڑھے پندرہ سالہ قید ناحق سے قوم کا تعلیم کے شعبے میں بہت بڑا نقصان ہوچکا ہے۔ اب ان کو جلد سے جلد وطن واپس لا کر اس کا ازالہ کرنا چاہئے۔ تقریب کے اختتام پر ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے بچوں میں تحائف تقسیم کئے
محمد ایوب

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *