مختلف ممالک اکتوبر میں پاکستان میں منعقدہ عالمی نمائش میں شرکت کے خواہشمند ہیں. ریاض احمد

مختلف ممالک اکتوبر میں پاکستان میں منعقدہ عالمی نمائش میں شرکت کے خواہشمند ہیں‘ کارپٹ مینو فیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن
حکومت ایکسپورٹرز کو مالی معاونت ‘سر پرستی فراہم کرے تو اپنی مصنوعات سے بھارت سمیت دیگر ممالک کو پچھاڑ سکتے ہیں‘ ریاض احمد کی گفتگو
لاہور(ویب ڈیسک)چین میں منعقدہ عالمی نمائش میں سارک سمیت دیگر ممالک کے نمائندہ وفود کو پاکستان میں اکتوبر میں منعقد ہونے والی 35ویں عالمی کارپٹ نمائش میں شرکت کی دعوت دی ہے جس کا مثبت رد عمل سامنے آیا ہے ،پاکستان کی کارپٹ مصنوعات کی بیرون ممالک میں بڑی مانگ ہے لیکن ہمارے ایکسپورٹرز کو بھارت سمیت دیگر ممالک کی طرز پر حکومت کی مالی معاونت اور سرپرستی حاصل نہ ہونے کے باعث مطلوبہ نتائج حاصل نہیں ہو رہے ۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان کارپٹ مینو فیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے سینئر وائس چیئرمین ریاض احمد نے کارپٹ انسٹی ٹیوٹ کے چیئر پرسن سعید خان اور میجر (ر) اختر نذیر کے ہمراہ چین کے چھ روزہ دورہ سے وطن واپسی پر گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ کارپٹ ایسوسی ایشن نے شیننگ میں منعقدہ عالمی نمائش میں اپنے طور پر شرکت کر کے کارپٹ انڈسٹری کی مارکیٹنگ اور پرموشن کے لئے چین ، بھارت، نیپال، سری لنکا، بھوٹان ، بنگلہ دیش، افغانستان، مالدیپ سمیت مغربی ممالک کے نمائندہ وفود سے ملاقاتیں کیں اور انہیں پاکستان میں اکتوبر میں منعقد ہونے والی 35ویں کارپٹ نمائش میں شرکت کی دعوت دی گئی جس کے مثبت جواب دیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی کارپٹ انڈسٹری سے وابستہ افراد نے شیننگ میں منعقدہ عالمی نمائش میں سٹالز بھی لگائے جس میں پاکستانی مصنوعات کو بہت پسند کیا گیا ۔ افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ماضی میں بیرون ممالک منعقدہ عالمی نمائشوں میں پاکستان کے سٹالز کی تعداد زیادہ ہوتی تھی لیکن اب انڈسٹری کی زبوں حالی کے باعث یہ تعداد کم ہو گئی ہے۔ شیننگ میں منعقدہ نمائش میں روایتی حریف بھارت کے 50جبکہ پاکستان کے 12سٹالز تھے ، میرا دعویٰ ہے کہ اگر پاکستانی حکومت ایکسپورٹرز کو بھارت اور دیگر ممالک کی طرز پر مالی معاونت اورسر پرستی فراہم کرے تو ہم اپنی مصنوعات سے ان ممالک کو پچھاڑ سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عالمی نمائش میں سی پیک اور ون بیلٹ ون روڈ منصوبہ بھی زیر بحث آیا اور اسے مستقبل میں پاکستان کی ترقی کا ضامن قرار دیاگیا ۔انہوں نے کہا کہ حکومت سے مطالبہ ہے کہ اکتوبر میں منعقد ہونے والی نمائش کی کامیابی کیلئے بھرپور معاونت اور سرپرستی کی جائے تاکہ اس نمائش کے مطلوبہ نتائج حاصل ہو سکیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *